Jesus Film Bible Study (Urdu) Part 5

حصہ 5

لوقا 19:45-46

پھِر وہ ہَیکل میں جا کر بیچنے والوں کو نِکالنے لگا۔ اور اُن سے کہا لِکھا ہے کہ میرا گھر دُعا کا گھر ہو گا مگر تُم نے اِس کو ڈاکُوؤں کی کھوہ بنا دِیا۔

یسوع ہیکل میں گیا اور جو کچھ اس نے وہاں دیکھا اس پر بہت غصہ ہوا۔ یسوع کو اتنا غصہ کیوں آیا؟ اس نے اسے ڈاکوؤں کا گڑھ کیوں کہا؟

ہیکل میں داخل ہوتے ہی یسوع نے سرافوں کو دیکھا اور ان تاجروں کو دیکھا جو قربانی کے لیے جانوروں کو ان لوگوں کے لیے مہنگے داموں فروخت کر رہے تھے جن کے پاس کوئی چارہ نہیں تھا کیونکہ انہیں قربانی کے لیے جانوروں کی ضرورت تھی۔ تاجروں نے مذہبی کاموں سے منافع کمایا اور اس منافع میں سردار کاہن کا حصہ تھا۔ وہ جگہ اتنا شور تھا کہ کسی کے لیے عبادت کرنا ناممکن تھا۔

یہ ممکن ہے کہ ہم دوسری چیزوں سے بھٹک کر جو کچھ کرتے ہیں اس کی روحانی اہمیت سے محروم ہوجائیں۔ گرجا گھر کو دعا کا گھر سمجھا جاتا ہے لیکن کیا ہمارے لیے یہ صرف میل جول، دوست بنانے اور کاروباری رابطے حاصل کرنے کی جگہ بن چکی ہیں؟

 ہیکل کی صفائی وہ واحد موقع تھا جب ہم نے پڑھا کہ یسوع غصے میں تھا۔ اور وہ کبھی بھی خود کی توہین  سے ناراض نہیں ہوئے، لیکن جب خدا کی ہیکل کی خلاف ورزی کی گئی تو وہ غصے میں تھا۔ یہی وہ چیز ہے جسے ہم راستباز غصہ کہتے ہیں، گناہ پر غصہ کرنا۔ کیا آج ہم گناہ پر غصہ کرتے ہیں اور بولتے ہیں یا ہم گناہ سے اتنے لاتعلق ہو جاتے ہیں کہ یہ زندگی کا ایک طریقہ بن چکا ہے جیسے ہم جنس پرستی، فلموں، رسالوں وغیرہ میں غیر اخلاقی مواد وغیرہ ہوتا ہے؟

لوقا 21: 1-4

پھِر اُس نے آنکھ اُٹھا کر اُن دَولتمندوں کو دیکھا جو اپنی نذروں کے رُوپے ہَیکل کے خزانہ میں ڈال رہے تھے۔ اور ایک کنگال بیوہ کو بھی اُس میں دو دمڑِیاں ڈالتے دیکھا۔ اِس پر اُس نے کہا مَیں تُم سے سَچ کہتا ہُوں کہ اِس کنگال بیوہ نے سب سے زِیادہ ڈالا۔ کِیُونکہ اُن سب نے اپنے مال کی بہُتات سے نذر کا چندہ ڈالا مکر اِس نے اپنی ناداری کی حالت میں جتنی روزی اُس کے پاس تھی سب ڈال دی۔

 

غریب بیوہ کے تحفے نے یسوع کو کیوں متاثر کیا؟

غریب بیوہ نے نہ صرف دیا بلکہ قربانی دی۔ یہ اہم نہیں ہے کہ ہم کتنا دیتے ہیں بلکہ یہ اہم ہے کہ ہم اسے دینے کے بعد کتنا دیتے ہیں۔

کیا ہم اپنے مال کو قربانی کے طور پر دینے کے علاوہ، کیا ہم کچھ اور بھی  قربانی کے طور پر خدا کو دیتے ہیں؟ مثال کے طور پر، کیا ہم اپنا وقت دیتے ہیں؟ کیا خدا کو ہمارا بہترین وقت ملتا ہے یا ہم خدا کو صرف وہ وقت دیتے ہیں جب ہم دوسرے کاموں سے مکمل طور پر تھک جاتے ہیں؟ 

 

 

 

 

لوقا 20:9-16

پھِر اُس نے لوگوں سے یہ تَمثِیل کہنی شُرُوع کی کہ ایک شَخص نے تاکِستان لگا کر باغبانوں کو ٹھیکے پر دِیا اور ایک بڑی مُدّت کے لِئے پردیس چلا گیا۔ اور پھَل کے مَوسم پر اُس نے ایک نَوکر باغبانوں کے پاس بھیجا تاکہ وہ تاکِستان کے بھَل کا حِصّہ اُسے دیں لیکِن باغبانوں نے اُس کو پِیٹ کر خالی ہاتھ لَوٹا دِیا۔ پھِر اُس نے ایک اور نَوکر بھیجا۔ اُنہوں نے اُس کو بھی پِیٹ کر اور بےعِزّت کر کے خالی ہاتھ لَوٹا دِیا۔ پھِر اُس نے تِیسرا بھیجا۔ اُنہوں نے اُس کو بھی زخمی کر کے نِکال دِیا۔ اِس پر تاکِستان کے مالِک نے کہا کہ کیا کرُوں؟ مَیں اپنے پیارے بَیٹے کو بھیجُوں گا۔ شاید اُس کا لِحاظ کریں۔ جب باغبانوں نے اُسے دیکھا تو آپس میں صلاح کر کے کہا یہی وارِث ہے اِسے قتل کریں کہ مِیراث ہماری ہو جائے۔ پَس اُس کو تاکِستان سے باہِر نِکال کر قتل کِیا۔ اَب تاکِستان کا مالِک اُن کے ساتھ کیا کرے گا؟ وہ آ کر اُن باغبانوں کو ہلاک کرے گا اور تاکِستان اَوروں کو دے دے گا۔ اُنہوں نے یہ سُن کر کہا خُدا نہ کرے۔

یسوع نے انہیں کرایہ داروں کی تمثیل بتائی تاکہ اس بات کی وضاحت کی جا سکے کہ خدا نے لوگوں کے پاس بہت سے نبی بھیجے، اس نے اپنا اکلوتا بیٹا بھیجا اور پھر بھی لوگوں نے اسے مسترد کر دیا۔ یہودیوں اور فرسیوں کی طرف سے یسوع کو مسترد کرنے کی کیا وجوہات ہیں؟

یہودی رومی ظالموں سے پرشان تھے اور یروشلم کی نجات اور بھالی کے لئے بے چین تھے۔

لوقا 2:25, 36-38  

اور دیکھو یروشلِیم میں شمعُون نام ایک آدمِی تھا اور وہ آدمِی راستباز اور خُدا ترس اور اِسرائیل کی تسلّی کا مُنتّظِر تھا اور رُوحُ القُدس اُس پر تھا۔ اور آشر کے قبِیلہ میں سے حنّاہ نام فنوایل کی بیٹی ایک نبِیّہ تھی۔ وہ بہُت عُمر رسِیدہ تھی اور اُس نے اپنے کنوارپن کے بعد سات برس ایک شَوہر کے ساتھ گُذارے تھے۔ وہ چَوراسی برس سے بیوہ تھی اور ہَیکل سے جُدا نہ ہوتی تھی بلکہ رات دِن روزوں اور دُعاؤں کے ساتھ عِبادت کِیا کرتی تھی۔ اور وہ اُسی گھڑی وہاں آ کر خُدا کا شُکر کرنے لگی اور اُن سب سے جو یروشلِیم کے چھُٹکارے کے مُنتظِر تھے اُس کی بابت باتیں کرنے لگی۔

وہ غلطی سے ایک سیاسی ہیرو کا انتظار کر رہے تھے، نہ کہ روحانی رہنما کا۔ ایک موقع پر انہوں نے اسے بادشاہ بنانے کی بھی کوشش کی۔ لیکن جب اس نے انکار کیا تو انہوں نے اسے مسترد کر دیا۔

یوحنا 6:15

جو کُچھ باپ کا ہے وہ سب میرا ہے۔ اِس لِئے مَیں نے کہا کہ وہ مُجھ ہی سے حاصِل کرتا ہے اور تُمہیں خَبریں دے گا۔

کیا وجوہات ہیں جن کی وجہ سے آج لوگ یسوع کو اپنا نجات دہندہ نہیں مانتے؟ ایسی کیا چیز ہے جو آپ کو یسوع سے اپنے خدا اور نجات دہندہ کے طور پر مسترد کرنے کا سبب بن رہی ہے؟

آج بھی لوگ یسوع کو ان کے پہلے سے طے شدہ خیالات کی وجہ سے مسترد کرتے ہیں۔

  • اگر یسوع خدا ہے، تو وہ زمین پر اتنی عاجزانہ زندگی نہیں گزارتا
  • اگر یسوع خدا ہے، تو وہ خود کو انسان کی حدود کے تابع نہیں کرے گا اور ایک انسان کی حیثیت سے زمین پر آئے گا۔

اگر یسوع خدا ہے، تو وہ اپنے دشمنوں کو اسے نقصان پہنچانے کی اجازت نہیں دیتا کیونکہ وہ اپنے آپ کو بچانے کے قابل ہوگا.

لوقا 22:7

اور عِیدِ فطِیر کا دِن آیا جِس میں فسح ذبح کرنا فرض تھا۔

یہودیوں نے بغیر خمیر والی روٹی اور فسح کے میمنے کی قربانی کا تہوار منایا۔

بے خمیر روٹی کا تہوار خدا کی طرف سے مصر میں بنی اسرائیلیوں کو غلامی سے نجات دلانے کی یاد میں منایا جاتا ہے۔

خروج 12:17

اور تم بےخمیری روٹی کی یہ عید منانا کیونکہ مَیں اُسی دِن تُمہارے جتھوں کو مُلک مصر سے نکا لُونگا ۔ اِس لئے تُم اُس دِن کو ہمیشہ کی رسم کر کے نسل درنسل ماننا ۔

اس تہوار کے دوران فسح کے برّے کو اس آخری نشان کی یاد دلانے کے لیے پیش کیا جاتا ہے جو خدا نے فرعون کے اسرائیلیوں کو جانے دینے سے پہلے مصر میں دکھایا تھا۔

خروج 11:1, 4-5

اور خُداوند نے مُوسیٰ سے کہا کہ میں فرعون اور مصریوں پر ایک بلا اور لاونگا۔اُس کے بعد وہ تم کو یہاں سے جانے دے گا اور جب وہ تم کو جانے دئیگا تو یقیناتم سب کو یہاں سے بالکل نکالدئیگا۔ اور موسیٰ نے کہا کہ خداوند یوں فرماتا ہے کہ میں آدھی رات کو نکل کر مصر کے بیچ میں جاونگا۔ اور ملک مصر کے سب پہلوھٹے فرعون جو تخت پر بیٹھا ہے اُس کے پہلوھٹے سے لیکر وہ لونڈی جو چکی پیستی ہے اُس کے پہلوھٹے تک اور سب چوپایوں کے پہلوھٹے مر جائے گے۔

خروج 12:3, 5-7, 12-13

پس اسرائیلیوں کی ساری جماعت سے یہ کہہ دوکہ اسی مہینے کےدسویں دن ہر شخص اپنے آبا ئی خاندان کے مطابق گھر پیچھے ایک برہ لے۔ تمُارا بّرہ بے عیب اور یکسالہ نر ہو اور اَیسا بّچہ یاتو بھیڑوں میں سے چن کر لینا یا بکر یوں میں سے ۔ اور تُم اُسے اِس مہینے کی چودھویں تک رکھ چھوڑنا اور اِسرائیلیوں کے قبیلوں کی ساری جماعت شام کو اٰسے زبح کریں ۔ اور تھوڑا سا خُون لے کر جن گھروں میں وہ اُسے کھائیں اُن کے دروازوں کے دونُوں بازُوؤں اور اُوپر کی چوکھٹ پر لگا دیں ۔ اِس لئے کہ میں اُس رات مُلک مصر میں سے ہو کر گزرونگا اور انسان اور حیوان کے سب پہلوٹھوں کو جو مُلک مصر میں ہیں مارُونگا اور مصر کے سب دیوتاؤں کو بھی سزا دونگا مَیں خُداوند ہوں ۔ اور جن گھروں میں تم ہو اُن پر وہ خُون تُمہاری طرف سے نشان ٹھہریگا اور مَیں اُس خُون کو دِیکھ کر تُم کو چھوڑتا جاؤنگا اور جب مَیں مصریوں کو مارُونگا تو وبا تُمہارے پاس پھٹکنے کی بھی نہیں کہ تم کو ہلاک کرے ۔

کیا وجہ تھی کہ خدا کے فرشتے نے یہودی گھروں میں پہلوٹھ کو قتل نہیں کیا جب اس نے دروازے کی چوکی پر برے کا خون دیکھا تھا؟

بے داغ برا  یسوع کی علامت ہے، جو بعد میں انسانیت کے لئے قربان ہونے آگا۔ خدا ہمیں سزا نہیں دے گا اگر ہم سزا سے بچانے کے لئے یسوع کے خون پر بھروسہ کرتے ہیں۔

یوحنا 1:29

دُوسرے دِن اُس نے یِسُوع کو اپنی طرف آتے دیکھ کر کہا دیکھو یہ خُدا کا بّرہ ہے جو دُنیا کا گُناہ اُٹھا لے جاتا ہے۔

لوقا 22:14-20

جب وقت ہوگیا تو وہ کھانا کھانے بَیٹھا اور رَسُول اُس کے ساتھ بَیٹھے۔ اُس نے اُن سے کہا مُجھے بڑی آرزُو تھی کہ دُکھ سہنے سے پہلے یہ فسح تُمہارے ساتھ کھاؤں۔ کِیُونکہ مَیں تُم سے کہتا ہُوں کہ اُسے کبھی نہ کھاؤں گا جب تک وہ خُدا کی بادشاہی میں پُورا نہ ہو۔ پھِر اُس نے پیالہ لے کر شُکر کِیا اور کہا کہ اِس کو لے کر آپس میں بانٹ لو۔ کِیُونکہ مَیں تُم سے کہتا ہُوں کہ اَنگُور کا شِیرہ اَب سے کبھی نہ پِیُوں گا جب تک خُدا کی بادشاہی نہ آ لے۔ پھِر اُس نے روٹی لی اور شُکر کر کے توڑی اور یہ کہہ کر اُن کو دی کہ یہ میرا بَدَن ہے جو تُمہارے واسطے دِیا جاتا ہے۔ میری یادگارِی کے لِئے یہی کِیا کرو۔ اور اِسی طرح کھانے کے بعد پیالہ یہ کہہ کر دِیا کہ یہ پیالہ میرے اُس خُون میں نیا عہد ہے جو تُمہارے واسطے بہایا جاتا ہے۔

گناہوں کی معافی کے لیے پہلے یسوع کو تکلیف اٹھانا کیوں ضروری تھا؟ خدا ہمارے گناہوں کو نظر انداز کیوں نہیں کر سکتا؟

بائبل تعلیم دیتی ہے کہ ہم سب نے گناہ کیا ہے۔

رومیوں 3:23 اِس لِئے کے سب نے گُناہ کِیا اور خُدا کے جلال سے محرُوم ہیں۔

گناہ میں موت کی سزا ہے۔

رومیوں 6:23

کِیُونکہ گُناہ کی مزدُوری مَوت ہے مگر خُدا کی بخشِش ہمارے خُداوند مسِیح یِسُوع میں ہمیشہ کی زِندگی ہے۔

کیونکہ خدا ایک مہربان خدا ہے، اس نے اپنے بیٹے کو قربان ہونے کے لیے بھیجا تاکہ ہمارے گناہوں کی سز کے لیے کفارہ دیے۔ خدا، دنیا کا راستباز جج ہونے کے ناطے، گناہ کو نظر انداز نہیں کر سکتا۔

ایک نوجوان عورت کے بارے میں ایک کہانی تھی جو تیز رفتاری کے الزام میں پکڑی گئی تھی۔ اسے عدالت لایا گیا جہاں جج نے 100 ڈالر کا جرمانے کیا۔ اس کے بعد جج نے ایک حیرت انگیز کام کیا۔ وہ اپنی کرسی سے نیچے اترا اور جرمانہ ادا کرنے کے لئے نیچے چلا گیا۔ آپ دیکھیں، جج لڑکی کے والد تھے. لیکن ایک جج ہونے کے ناطے، اسے انصاف پسند ہونا چاہئے اور سزا سنائی جانی چاہئے۔ لیکن چونکہ وہ اپنی بیٹی سے محبت کرتا ہے، اس لئے وہ جرمانہ خود ادا کرنے کے لئے تیار ہے۔

خدا کی طرف سے کسی گنہگار کو بغیر کسی سزا کے معاف کرنے کا امکان ہمارے انصاف کے فطری احساس کے برعکس ہے۔  اگر کوئی انسانی جج ایسا کرے تو ہم سوچیں گے کہ وہ ایک بدعنوان جج ہے نہ کہ راستباز۔ لہٰذا ایک مہربان اور انصاف پسند خدا کے لیے صرف ایک ہی حل بچا ہے۔ ایک انصاف پسند خدا ہونے کے ناطے، اسے گناہ کی سزا کو پورا کرنا پڑتا ہے. ایک مہربان خدا ہونے کے ناطے، وہ اس بات کے لیے تیار نہیں ہے کہ کوئی ہلاک ہو جائے اور اس کے بجائے اس نے اپنے بیٹے کو ہماری طرف سے قربان ہونے کے لیے بھیجا۔

لوقا 22:39-43

پھِر وہ نِکل کر اپنے دستُور کے مُوافِق زَیتُون کے پہاڑ کو گیا اور شاگِرد اُس کے پِیچھے ہو لِئے۔ اور اُس جگہ پہُنچ کر اُس نے اُن سے کہا دُعا کرو کہ آزمایش میں نہ پڑو۔ اور وہ اُن سے بمُشکِل الگ ہو کر کوئی پتھّر کے ٹپّے آگے بڑھا اور گھُٹنے ٹیک کر یُوں دُعا کرنے لگا کہ۔ اَے باپ اگر تُو چاہے تو یہ پیالہ مُجھے سے ہٹا لے تَو بھی میری مرضی نہِیں بلکہ تیری ہی مرضی پُوری ہو۔ اور آسمان سے ایک فرِشتہ اُس کو دِکھائی دِیا۔ وہ اُسے تقوِیت دیتا تھا۔

کیا یسوع صلیب پر جانے سے ہچکچا رہا تھا؟ اس نے خدا باپ سے مصائب کا پیالہ دور کرنے کے لئے کیوں کہا؟

یسوع صلیب پر جانے کو تیار نہیں تھا۔ یسوع مکمل طور پر انسان اور مکمل طور پر خدا تھا اور مصائب سے ڈرتا ہوا انسان تھا۔ تاہم ، اس نے خدا سے خدا کی مرضی کو پورا کرنے کے لئے کہا اور اس نے خدا کی مرضی کے سامنے اپنا سر جھکا دیا۔ 

جب ہم شدید مشکلات کا سامنا کرنے والے ہوتے ہیں، تو ہم دعا میں وقت گزارنے کے لئے یسوع کی مثال سے سیکھ سکتے ہیں۔ یسوع کی دعا کے ساتھ کیا ہوا؟

خدا نے یسوع کو تقویت دینے کے لئے ایک فرشتہ بھیجا۔